57

وائبر کا نیا فیچر فیس بک اور واٹس ایپ کیلئے خطرہ بن گیا

وائبر، واٹس ایپ کی طرح ایک میسینجر ایپ ہے، جس کے صارفین کی تعداد 1 ارب تک پہنچ چکی ہے۔ وائبر کی بڑھتی ہوئی مقبولیت نہ صرف واٹس ایپ بلکہ فیس بک کیلئے خطرہ بنتی جا رہی ہے۔

حال ہی میں اس میسینجر ایپ میں ایک دلچسپ اپ ڈیٹ متعارف کرائی گئی ہے، جس میں کسی بھی اپلیکشن کے مقابلے سب سے بڑا گروپ چیٹ بنایا جاسکتا ہے۔

اس گروپ فیچر کو ‘وائبر کمیونٹی’ کا نام دیا گیا ہے۔ جس میں ایک ارب افراد کو ایڈ کیا جا سکتا ہے۔

رواں ہفتے کے شروع میں وائبر نے خاموشی سے وائبر کمیونٹیز کو متعارف کرایا تھا، جو بنیادی طور پر پبلک چیٹ گروپس سمجھے جاسکتے ہیں۔ اس میں اراکین کی تعداد کی کوئی حد نہیں، یعنی ایک گروپ میں بھی ایک ارب افراد کو ایڈ کیا جاسکتا ہے۔

یہ بالکل فیس بک گروپس جیسا نیٹ ورک ہے جسے ایک الگ ایپ بھی دی گئی ہے۔

وائبر فیس بک کے مقابلے میں صارفین کو ایک فائدہ دے رہی ہے، جس میں فون نمبر کو خفیہ رکھنے کے ساتھ صرف پروفائل فوٹو اور نام کو ہی شو کیا جائے گا، ایسا فیس بک میں ممکن نہیں۔

خیال رہے کہ ٹیلیگرام میں بھی سپرگروپ کے نام سے ایسا فیچر ہے جس میں ایک لاکھ افراد کو ایڈ کیا جاسکتا ہے، جبکہ واٹس ایپ میں کوئی پبلک گروپ چیٹ پلیٹ فارم نہیں بلکہ عام گروپ چیٹ کا فیچر ہے جس میں 256 افراد ہی ایڈ ہوسکتے ہیں۔

ان گروپ چیٹ کو سنبھالنے کے لیے سپر ایڈمنز اور ایڈمن وغیرہ موجود ہوں گے، جبکہ نئے اراکین کو مدعو کرنے کے لیے ضابطے بھی بناجاسکتے ہیں۔

وائبر بنیادی طور پر فیس بک کی جانب سے پبلشرز پر لگائی جانے والی پابندیوں کا فائدہ اٹھانے کے لیے یہ فیچر سامنے لے کر آئی ہے، تاکہ کاروباری ادارے اس ایپ کو ترجیح دینے لگیں۔

کمپنی کے مطابق جو ادارے ان کمیونٹیز کے ذریعے اپنا کاروبار تشکیل دینا چاہتے ہیں، ان کے لیے مستقبل قریب میں پیسے کمانے کے فیچرز بھی متعارف کرائے جائیں گے۔

کمپنی کا مزید کہنا تھا کہ وائبر لوگوں کو ذاتی تعلقات اور مشترکہ مقاصد کے لیے اکھٹا کرنا چاہتی ہے، یہاں لوگ ایک دوسرے سے جڑنے کے لیے آزاد ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں