158

چین میں وبائی مرض کی سب سے پہلے خبر دینے والا ڈاکٹر بھی کورونا وائرس سے ہلاک

چینی نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق دو دن میں کورونا وائرس سے متاثرہ مزید 73 افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد مجموعی طور پر ہلاک ہونے والوں کی تعداد 640 ہوگئی ہے جب کہ 31 ہزار سے زائد مریض اب بھی زیر علاج ہیں۔ پراسرار وائرس کی ہلاکت خیزی کا مقابلہ کرنے والے میڈیکل اسٹاف اور چینی عوام کو اس وقت دھچکہ لگا جب اس ہلاکت خیز وائرس کی سب سے پہلے اطلاع دینے والے اور وائرس سے متاثرہ افراد کے علاج معالجے میں مصروف ڈاکٹر لی وین لیانگ خود بھی کورونا وائرس کا شکار ہو کر جہان فانی سے کوچ کر گئے

34 سالہ چینی ماہر امراض چشم نے گزشتہ برس دسمبر میں ووہان میں ایک پُراسرار وائرس کے پھیلنے کا انکشاف چینی ٹویٹر ’وائی ہو‘ کے ڈاکٹرز کے ایک گروپ میں کیا تھا، کورونا وائرس سے متعلق آگاہی پھیلانے پر چینی پولیس نے ابتدا میں انہیں ’ افواہیں پھیلانے‘ کے جرم میں گرفتار بھی کرلیا تھا۔ ادھر چینی صدر شی جنگ پنگ نے اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ سے ٹیلی فونک گفتگو میں ہلاکت خیز کورونا وائرس پر قابو پانے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بتدریج وائرس کنٹرول کرنے کے اثرات سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں اور جلد ہی اس وبا کو پوری طرح ختم کر دیا جائے گا۔ دوسری جانب پراسرار وائرس چین کی حدود سے نکل کر 20 سے زائد ممالک تک جا پہنچا ہے، جہاں یہ وائرس اب تک 2 ہزار سے زائد افراد کو متاثر کرچکا ہے جب کہ ان ممالک میں کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 240 تک جا پہنچی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں